60

سعودی مملکت میں ہر روز 26 فرمز بند ہو رہی ہیں

2018ء کی تیسری سہ ماہی میں 7,143کمپنیاں بند ہو گئیں

ریاض(
ویب ڈیسک  ۔22 جنوری 2019ء ) جنرل آرگنائزیشن فار سوشل انشورنس کی جانب سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 2018ء کی تیسری سہ ماہی کے دوران مجموعی طور پر 7,143 تجارتی ادارے سعودی لیبر مارکیٹ سے خارج ہو گئے۔ رپورٹ کے مطابق 2017ء کے اختتام تک مملکت میں 460,858 تجارتی ادارے تھے جو گزشتہ سال کی تیسری سہ ماہی کے بعد اب 453,715 پر محدود ہو گئے ہیں۔اس کا مطلب یہ ہے کہ روزانہ کی اوسط سے 26 ادارے دم توڑ رہے ہیں۔ مملکت میں چار افراد یا اس سے کم پر مشتمل اداروں اور دُکانوں کی تعداد 229,361 ہے جو کہ کُل کاروباری یونٹس کا پچاس فیصدبنتا ہے۔ جبکہ 90,460 ادارے ایسے ہیں جہاں ملازمین کی تعداد 5 سے 9 کے درمیان ہے۔ 59,683 کاروباری مراکز ایسے ہیں جہاں ملازمین کی تعداد 19کے لگ بھگ ہے جبکہ 472 اداروں میں ملازمین کی تعداد 499 کے آس پاس ہے۔

مملکت میں 1,512 ادارے ایسے ہیں جہاں ملازمین کی تعداد پانچ سو سے اس سے زائد ہے جبکہ 5,756 کاروباری مراکز وہ ہیں جہاں ملازمین کی گنتی 100 سے 199کے درمیان ہے۔ 811 اداروں میں ملازمین کی گنتی 300 سے 399 کے درمیان ہے۔ سب سے زیادہ کاروباری مراکز ریاض میں ہیں جن کی گنتی 105,982 نوٹ کی گئی، اس کے بعد مکہ کا نمبر ہے جہاں اس نوعیت کے اداروں کی گنتی 60,652 ریکارڈ کی گئی۔ مشرقی صوبے میں موجود کاروباری اداروں کی گنتی 42,981 ہے اس کے بعد قسیم 34,596 کی گنتی کے ساتھ براجمان ہے۔ شمالی سرحدی صوبہ میں موجود کاروباری مراکز کی گنتی صرف 4,766 نوٹ کی گئی ہے۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں