70

جعلی اکاونٹس کیس، نیب کی جانب سے پہلا بڑا ایکشن

چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے جعلی اکاؤنٹس کیس نیب راولپنڈی کو بھیجنے کا فیصلہ کرلیا

اسلام آباد (
ویب ڈیسک  ۔22 جنوری2019ء) جعلی اکاونٹس کیس، نیب کی جانب سے پہلا بڑا ایکشن، چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے جعلی اکاؤنٹس کیس نیب راولپنڈی کو بھیجنے کا فیصلہ کرلیا۔ تفصیلات کے مطابق چیئرمین نیب نے جعلی اکاؤنٹس کیس نیب راولپنڈی کے حوالے کر دیا۔ پاناما جے آئی ٹی کے رکن عرفان نعیم منگی آصفزرداری، فریال تالپور، بلاول بھٹو اور مراد علی شاہ کیخلاف تحقیقات کریں گے۔نیب کی جانب سے 16 ریفرنس دائر کرنے پر غور کیا جا رہا ہے۔ قومی احتساب بیورو کے ذرائع کا کہنا ہے کہ چیئرمین جاوید اقبال کی ہدایت پر جعلی اکاؤنٹس کیس کی تحقیقات نیب راولپنڈی کے سپرد کی گئی ہیں۔ بطور ڈی جی عرفان نعیم منگی اس سارے سکینڈل کی تحقیقات کریں گے جس کے بعد جڑواں شہروں کی احتساب عدالتوں میں ریفرنسز دائر کئے جائیں گے۔

ذرائع کے مطابق نیب راولپنڈی سابق صدر آصف زرداری، ان کی ہمشیرہ فریال تالپور، بیٹے بلاول بھٹو زرداری اور وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ سمیت دیگر افراد کے خلاف تحقیقات کرے گا۔نیب جعلی اکائونٹس کیس میں 16 ریفرنسز دائر کرنے پر غور کر رہا ہے۔ حتمی فیصلہ عرفان نعیم منگی کی تحقیقات کی روشنی میں کیا جائے گا۔ دوسری جانب یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ جعلی اکاؤنٹس کیس میں نیب کی تحقیقات افسران کی کمی کے باعث تاخیر کا شکار ہو رہی ہے۔ 16 ٹیموں کیلئے 64 افسران درکار ہیں ایس لیے تفتیش میں تاخیر کا امکان ہے۔ نیب راولپنڈی جعلی اکاؤنٹس کے 16 مقدمات پر 16 تحقیقاتی ٹیمیں تشکیل دے گی اور ہم ٹیم کے لئے 2 تفتیشی افسر ، ایک کیس افسرا اور ایک لیگل افسر درکار ہے اس طرح نیب کو جعلی اکاؤنٹس کیس میں کل 64 افراد درکار ہیں اور 64 افسران کی تعیناتی کے لئے نیب راولپنڈی کو مشکلات کا سامنا ہے اور محدود افسران کے باعث تفتیش تاخیر کا شکار ہو سکتی ہے۔واضح رہے کہ عرفان نعیم منگی نواز شریف کے خلاف بننے والی پاناما جے آئی ٹی میں بھی نیب کی جانب سے رکن تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں