جانئے بغیر کسی ہتھیار کے خطرناک ترین جنگلی جانوروں سے مقابلے کا آسان ترین طریقہ

اگر آپ نہتے ہوں اور کوئی شیر، چیتا یا ہاتھی حملہ کردے تو کس طرح بچاجاسکتا ہے؟ جانئے بغیر کسی ہتھیار کے خطرناک ترین جنگلی جانوروں سے مقابلے کا آسان ترین طریقہ

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) شیر، چیتے، کتے اور سانپ جیسے خطرناک جانوروں کا سامنا کسی بھی شخص کے اوسان خطا کردینے کے لیے کافی ہوتا ہے لیکن اگر آدمی اپنے حواس بحال رکھے اور ہوش مندی سے کام لیتے ہوئے کچھ اقدامات کرے تو ان سے بچنے کا راستہ نکل سکتا ہے۔ذیل میں ان اقدامات کی تفصیل، ان جانوروں کے حملہ کرنے طریقے اور بچاﺅ کی تدابیر بیان کی جا رہی ہیں۔
شیر
اگر آپ کا شیر سے سامنا ہو جائے تو سرپٹ بھاگنے کی بجائے اس کی آنکھوں میں آنکھیں ڈالیں اور آنکھوں کا رابطہ کٹنے مت دیں، اور اسی حالت میں آہستہ آہستہ پیچھے ہٹیں۔ یاد رکھیں، کبھی بھی شیر کی طرف پشت کرکے دوڑ لگانے کی غلطی مت کریں۔شیر عموماً انسان کو مارڈالنے کے لیے حتمی حملے سے قبل ایک یا دو بار حملہ کرنے کا دھوکہ دیتا ہے۔ ان دھوکے کے حملوں کو بہادری سے برداشت کرنا آپ کے بچ جانے کی ضمانت دے سکتا ہے۔شیر دھوکے کا حملہ اس طرح کرتا ہے کہ یہ آدمی کی طرف تیزی سے دوڑتا ہے مگر چند قدم پر آ کر رک جاتا ہے۔اگر شیر ایسا کرتا ہے تو اپنے بازﺅوں کو باہر کی طرف نکالیے اور خود کو بڑا اوربہادرظاہر کرنے کی کوشش کیجیے اور اتنی بلند آواز نکالیے جتنی آپ نکال سکتے ہوں۔ممکنہ طور پر شیر آپ کے ان اقدامات کے نتیجے میں ڈر کر بھاگ جائے گا۔
شیر کاآدمی کوہلاک کرنے کا طریقہ
شیراپنے جبڑے آدمی کے نرخرے (گردن میں سانس کی نالی)پر کس دیتا ہے اور دم گھونٹ کر اسے ہلاک کرتا ہے۔

چیتا
اگر آپ کا چیتے سے سامنا ہو جائے تو شیر کے برعکس کبھی بھی اس کی آنکھوں میں آنکھیں ڈالنے کی غلطی مت کریں۔چیتا آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر دیکھنے کو اپنے لیے چیلنج سمجھتا ہے۔ چیتا کبھی بھی شیر کی طرح دھوکے پر مبنی حملہ نہیں کرتا، بلکہ اس کا پہلا حملہ ہی حتمی ہوتا ہے۔اگر آپ کاچیتے سے سامنا ہو جائے تو بالکل ساکت کھڑے ہو جائیے اور بازو پھیلا کر خود کو بڑا ثاہر کیجیے اور بلند آواز میں چلائیے۔
چیتے کا آدمی کو ہلاک کرنے کا طریقہ
چیتا بھی شیر ہی کی طرح آدمی کو گردن سے دبوچتا ہے اور دم گھونٹ کر مارتا ہے۔

ہاتھی
اگر ہاتھی آپ پر حملہ آور ہوتا ہے تو اپنی جگہ پر جم کر کھڑے ہو جائے اور خود کو بہادر ظاہر کیجیے۔ہاتھی غصے سے اپنے کان پھڑپھڑائے گا اور چنگھاڑے گا مگر آپ اپنی جگہ پر جمے رہیے۔یہ بھی شیر کی طرح پہلے ایک یا دو فرضی حملے کرتا ہے۔ایسے میں اپنے آپ کو بڑا ظاہر کیجیے اور ساکت کھڑے رہ کر بلند آواز میں چلائیے۔
ہاتھی کا آدمی کو ہلاک کرنے کا طریقہ
ہاتھی آدمی کو اپنے دکھائی دینے والے دانتوں سے زخمی کرتا ہے اور پھر کچل کر مارڈالتا ہے۔

جنگلی بھینسا
جنگلی بھینسے کا سامنا ہونے پر ہوا کی سی پھرتی سے دوڑ لگائیے اور اس وقت ہار مانیے جب آپ خود سے گر جائیں اور مزید دوڑنے کا یارا نہ ہو۔ جنگلی بھینسا بھی فرضی حملہ نہیں کرتا اور حتمی حملے سے قبل کوئی وارننگ نہیں دیتا۔آپ کبھی بھی بھینسے پر حاوی نہیں ہو سکتے اور اسے مقابلہ کرکے ہرا نہیں سکتے لہٰذا اس کے لیے دوڑنا ہی بہترین آپشن ہے۔ اگر قریب کوئی درخت واقع ہو تو اس پر چڑھ کر بھی جان بچائی جا سکتی ہے۔
جنگلی بھینسے کا آدمی کو ہلاک کرنے کا طریقہ
جنگلی بھینسا اپنے سینگوں سے آدمی پر حملہ آور ہوتا ہے اور سینگوں سے ہی روند کر مار ڈالتا ہے۔

پالتو کتا
اگر آپ گلی میں جا رہے ہوں اور پالتو کتا آپ کے پیچھے پڑ جائے تو بھاگ کر اس سے جان بچانا ناممکن ہوتا ہے۔ایسے میں کھڑے ہو جانا اور کتے سے مقابلہ کرنے کا آپشن ہی باقی ہوتا ہے۔اپنے دونوں ہاتھوں سے گھونسہ بنائیے اور کتے پر جوابی حملہ کیجیے۔اس کے ساتھ تحکمانہ انداز میں کتے پر چلائیے لیکن یاد رکھیے کہ اس کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر مت دیکھیے۔بس اس پر لاتیں اور گھونسے برساتے اور چلاتے جائیے۔اگر کتا آپ کو زمین پر گرانے میں کامیاب ہو جائے تو اپنے گلے اور گردن کے پچھلے حصے کو اپنی کہنیوں سے چھپا لیجیے اور پھر جب موقع ملے اس کی آنکھ پر گھونسہ مارئیے۔
کتے کا آدمی کو ہلاک کرنے کا طریقہ
کتا عموماً آدمی کی خون کی نالی پر کاٹتا ہے اور یوں خون بہہ جانے سے اس کی موت واقع ہوجاتی ہے۔

سانپ
اگر آپ کا سانپ سے سامنا ہو تو آہستہ آہستہ پیچھے ہٹنے کی کوشش کیجیے اور پیچھے ہوتے ہوئے اپنی سمت تبدیل کرتے رہیے۔اگر آپ دیکھیں کہ سانپ آپ کے پیچھے آ رہا ہے تو زور سے پیر زمین پر پٹخیے تاکہ اس سے زمین میں تھرتھراہٹ پیدا ہو اور سانپ ڈر کر اپنا راستہ بدل لے۔اگر بدقسمتی سے سانپ آپ کو کاٹ لے تو جسم کے اس متاثرہ حصے کو دل سے نیچے رکھیے تاکہ زہر دل تک پہنچنے میں زیادہ سے زیادہ وقت لگے اور ساتھ ہی فوری طور پر قریبی ہسپتال پہنچنے کی کوشش کیجیے اگر ممکن ہو تو اس سانپ کی ایک تصویر بنا لیجیے تاکہ ڈاکٹر تصویر کو دیکھ کر فوری طور پر زہر کی قسم کی تشخیص کر سکیں اور آپ کو بہتر دوا دے سکیں۔
سانپ کا زہر کیسے اثر کرتا ہے
سانپوں کی مختلف اقسام میں مختلف اثر کا حامل زہر پایا جاتا ہے۔بعض سانپوں کے زہر سے دل کی دھڑکن رک جاتی ہے اور آدمی موت کے منہ میں چلا جاتا ہے۔ بعض اقسام کے زہر سے انسان کے پٹھے مفلوج ہو جاتے ہیں اور بعض سے آدمی کا خون اس قدر گاڑھا ہو جاتا ہے کہ وہ وریدوں میں بہنے کے قابل نہیں رہتا اور یوں موت واقع ہو جاتی ہے۔

زہریلی مکڑی

زہریلی مکڑی کے حملے سے بچنا تقریباً ناممکن ہوتا ہے۔آدمی کو پتا ہی اس وقت چلتا ہے جب یہ کاٹ لیتی ہے۔ اگر کسی کو زہریلی مکڑی کاٹ لے تو اسے اپنے زخم کو اچھی طرح صابن سے دھونا چاہیے اور ٹھنڈی ’ٹکور‘ کرنی چاہیے۔اس کے بعد ڈاکٹر سے رجوع کرنا چاہیے۔
مکڑی کا زہر کیسے اثر کرتا ہے
سانپ ہی کی طرح مکڑی کی مختلف زہریلی اقسام کا زہر بھی مختلف طریقے سے اثر کرتا ہے۔